Home / فلکیات / زمین کی جسامت کی پیمائش اور اریٹوس کا تجربہ

زمین کی جسامت کی پیمائش اور اریٹوس کا تجربہ

قدیم یونانی دور میں فیثا غورث اور پھر اس کے بعد ارسطو  اور ہسپارکس وغیرہ زمین زمین کا محیط معلوم کرنے کی کوشش کرتے رہے مگر اُن کو کامیابی نصیب نہ ہوسکی۔

اریٹوس تھینز(Eratosthenses) نے 200قبل مسیح میں زمین کے محیط کی پیمائش کیلئے جیومیٹری کے اصولوں کی مدد لی اور کامیابی حاصل کی۔  اس نے مشاہدہ کیا کہ مصر کا شہر اسواں (Syene)  جو کہ خط سرطان 23 ½ N کے قریب واقع ہے میں 21جون کودوپہر کے وقت ایک کنویں سورج کی شعاعیں ٹھیک نوے کا زاویہ بناتی ہیں اور کنویں کے پیندے تک روشنی جاتی ہے۔ ٹھیک اسی دن اور اسی وقت اسواں کے شمال میں 5000 سٹیڈیا کے فاصلے پر واقع شہر اسکندریہ میں سورج کی کرنوں کا جھکاومیں 7درجےکا فرق تھا اور اسکندریہ میں یہ زاویہ 83 درجے تھا جو کہ ایک دائرے کے محیط کا 1/50بنتا ہے۔

(سٹیڈیا فاصلے کی اکائی تھی۔ ایک سٹیڈیا 185میٹر کے برار تھا)

 

چنانچہ اس نے زمین کے کل محیط کو دائرہ تصور کرتے ہوئے اسواں اور اسکندریہ کے درمیانی فاصلے کو جو کہ 7ڈگری کی ایک قوس بناتا تھا اور زمین پر اس کا حقیقی فاصلہ 5000سٹیڈیا تھا جوکہ کل زمینی محیط کا  1/50بنتا تھا اس لئے اس کا بیان کردہ زمین کا محیط 250,000سٹیڈیا بنتا ہے دوسرے الفاظ میں 46250کلو میٹر ، جبکہ حالیہ درست معلوم محیط تقریبا40,000کلومیڑ ہے۔

یہ تجربہ آپ خود بھی کر سکتے ہیں اور اس کیلئے آپ کو کنویں یا اسواں جانے کی بھی ضرورت نہیں۔ اس کیلئے آپ کو کسی ایک عمودی ستارے کو مرکز مان کر اس کا زمین کے ساتھ اینگل  یا زاویہ لینا ہو گا پھر یہ ہی کام زمین پر کسی دوسرے مقام پر کرنا ہو گامگر یا رہے ایک تو دونوں مقامات شمالاً جنوباً ہوں دوسرے ان کے درمیان کم از کم 111کلو میٹر کا فاصلہ ہو کیونکہ زمین کی سطح پر اتنا فاصلہ تقریباً ایک ڈگری کا زاویہ بناتا ہے۔

 

دونوں مقامات کا زاویہ معلوم کرنے کے بعد زمین پر دونوں مقامات کا درمیانی فاصلہ معلوم کرکے اسے اس نسبت سے ضرب دینے سے(جتنا فیصدی حصہ دائرے پر دونوں مقامات کا حقیقی فاصلہ ظاہر کرے)  زمین کا محیط معلوم ہو جائے گا۔

About محمد سلیم

محمد سلیم ایک کمپیوٹر پروگرامر ہیں اور ایک سافٹ وئیر ہاوس چلا رہے ہیں۔ سائنس خصوصا فلکیات پر پڑھنا اور لکھنا ان کا مشغلہ ہے۔ ان کے مضامین یہاں کے علاوہ دیگر کئی ویب سائٹس پر بھی پبلش ہوتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *